شیعہ نیو ز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان کے شعبہ ترییت اور ادارہ المہدیؑ کے زیراہتمام ڈویژنل مسئولین کی ورکشاپ امام بارگاہ قصرالقائم میں منعقد ہوئی۔ ورکشاپ میں پرسنل مینجمنٹ، مدیریت از نظر اسلام، حالات حاضرہ، شعبہ جاتی کارکردگی سمیت مختلف موضوعات پر مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے رہنماؤں علامہ امین شہیدی، سید ناصر عباس شیرازی کے علاوہ مرکزی صدر آئی ایس او پاکستان انصر مہدی، ادارہ تربیت المہدیؑ کے علماء مولانا اسد نقوی، مولانا سبطین علوی اور مینجمنٹ کے ماہر ثقلین حیدر، معروف صحافی نادر بلوچ نے شرکاء سے خطاب کیا۔

تین روزہ ورکشاپ میں پنجاب، کے پی کے، کشمیر، جموں اور گلگت بلتستان سے تعلق رکھنے والے آئی ایس او کے ڈویژنل عہدیداروں نے شرکت کی۔ واضح رہے ورکشاپ کی میزبانی آئی ایس او سرگودہا ڈویژن نے کی۔ ورکشاپ کی اختتامی نشست سے مرکزی صدر آئی ایس او نے خطاب کیا۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) اصغریہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان کے مرکزی صدر قمر عباس غدیری نے انقلاب اسلامی ایران کی چالیسویں سالگرہ کی مناسبت سے کہا ہے کہ جب امام خمینیؒ نے ایران میں انقلاب اسلامی برپا کیا، تو دنیا کے تمام مظلوموں کی نظریں اس انقلاب پر مرکوز ہوئیں، جس کی بنیادی وجہ یہ تھی کہ اس انقلاب کے بانی کا پہلا نعرہ لا شرقیہ لاغربیہ تھا، یعنی اسلام میں کسی طرح کی بھی سرحد کی قید نہیں ہیں، اسلام شرق و غرب میں یعنی پوری دنیا میں اپنا جھنڈا لہرانے کا تصور رکھتا ہے۔

اپنے بیان میں قمر عباس نے کہا کہ اسلام عدل الٰہی پورے دنیا کے مظلوموں اور ستم رسیدہ لوگوں کو حق دلانے کا وعدہ پورا کرنے کی یقین دہانی کرتا ہے، اگرچہ وہ غیر مسلم ہی کیوں نہ ہو۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ ایرانی نظام اور امام خمینیؒ کے دور کے ایرانی نظام میں میں کوئی فرق نہیں، امامؒ نے اس شخص کو اپنا نائب چنا، جو زندہ و شب بیدار ہے، امامؒ کی طرح دنیا کے تمام مظلوم انسانوں کیلئے اور خصوصاً مظلوم مسلمانوں کیلئے درد رکھتا ہے اور ظالم، ستمگر ان سے اتنی ہی نفرت رکھتے ہیں۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) یمنی فوج اور عوامی رضاکارفورس نے سعودی عرب اور اس کے اتحادیوں کے متعدد فوجیوں کو موت کے گھاٹ اتاردیا ہے۔

یمن سے موصولہ خبروں کے مطابق یمنی فوج اور عوامی رضاکارفورس کے اسنائپروں نے سعودی عرب کے جنوبی علاقے جیزان میں تین سعودی فوجیوں کو موت کے گھاٹ اتاردیا۔
یمنی فوج نے جیزان میں ہی سعودی عرب کے اتحادی فوجیوں کے ٹھکانوں پر توپخانے سے گولہ باری کی۔
اس حملے میں سعودی عرب اور اس کے اتحادی فوجیوں کو خاصا جانی اور مالی نقصان ہوا۔
دوسری جانب یمن کے صوبہ تعز میں بھی یمنی فوج اور عوامی رضاکارفورس کے توپخانے کے یونٹ نے سعودی اتحادی فوجیوں کے ٹھکانوں پرحملہ کیا۔


اس درمیان یمنی فوج نے سعودی اتحادی فوجیوں کے ایک حملے کو تعز کے ہی علاقے الجرہ میں پسپا کردیا ہے۔
یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ سعودی عرب کے ذریعے یمن کا چاروں طرف سے محاصرہ جاری رہنے کے باوجود یمن کی فوج اور عوامی رضاکارفورس کی دفاعی توانائیوں میں روز بروز اضافہ ہوتا جارہا ہے۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) مجلس وحدت مسلمین پاکستان گلگت بلتستان کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل شیخ احمد علی نوری نے اپنے ایک تعزیتی بیان میں کہا ہے کہ عالم مبارز و مجاہد حجت السلام آغا علی رضوی کو انکی والدہ محترمہ اور میر واعظ نیورنگاہ آغا محمد علی شاہ کو انکی اہلیہ محترمہ کی وفات پر تعزیت و تسلیت پیش کرتے ہیں۔

انہوں نے اپنے بیان میں کہا کہ آغا علی رضوی کی والدہ محترمہ کی رحلت پر انکو اور تمام لواحقین کو تعزیت و تسلیت و پیش کرتے ہیں۔ والدہ محترمہ کی وفات سے آغا علی رضوی کی زندگی میں جو خلا پیدا ہوگیا ہے اسے پر کرنا ممکن نہیں۔ انہیں صبر و شکر کی تلقین کے ساتھ والدہ محترمہ کی مغفرت اور درجات کی بلندی کے لیے دعا گو ہیں۔ انہوں نے کہا کہ موت ایک اٹل حقیقت ہے اور ہر کسی نے اس کا مزہ چکھنا ہے۔ خدا اپنے بندوں کو مختلف امتحانات کے ذریعے سے آزماتا ہے اور وہی بندے کامیاب ہوتے ہیں جن کے ہاتھ سے صبر و شکر کا دامن نہیں چھوٹتا۔ ماں جیسی عظیم ہستی کی موت انتہائی سخت امتحان ہے، کیونکہ اس ہستی کی کمی کو کوئی بھی پورا نہیں کرسکتا۔ اللہ سے دعا ہے کہ اپنے نہ ختم ہونے والے خزانہ غیب سے لواحقین بلخصوص آغا علی رضوی کو اس نعمت کا نعم البدل عطا فرما اور مرحومہ کے درجات میں اضافہ فرما۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) اصغریہ علم و عمل تحریک پاکستان کے مرکزی صدر سید پسند علی رضوی نے بی بی سیدہ زینب (س) کی ولادت باسعادت کی مناسبت سے اپنے بیان میں کہا ہے کہ بی بی سیدہ زینب (س) کا کردار خواتین کیلئے مشعل راہ ہے، آپ نے باطل کے خلاف امام حسینؑ کے شانہ بشانہ حق کا ساتھ دیا، امام حسینؑ کی شہادت کے بعد دراصل حضرت زینب (س) نے حسینی پیغام کو دنیا والوں تک پہنچایا، ایک دینی و الٰہی فریضہ تصور کیا اور اپنی خداداد فصاحت و بلاغت اور بے نظیر شجاعت کے ذریعے ظلم و ستم کے خلاف ہمیشہ آواز بلند کی۔

پسند علی نے کہا کہ بی بی سیدہ زینب (س) نے اپنی پاک و پاکیزہ حیات کے دوران اہل بیت پیغمبر کے حقوق کا دفاع کیا اور کبھی اس بات کی اجازت نہ دی کہ دشمن، واقعہ کربلا سے ذاتی فائدہ اٹھا سکے۔ انہوں نے کہا کہ بی بی سیدہ زینب (س) نے دربار یزید میں جو خطبہ دیا، وہ ایک وسیع مقاصد کا حامل ہے، جس کو سمجھنے کی ضرورت ہے، آج دنیا میں ظالم، باطل، فاسق و فاجر حکمرانوں کا نظام ہے، جس کی وجہ سے دنیا میں بدامنی اور دہشتگردی عروج پر ہے، اس لئے ہمیں بی بی سیدہ زینب (س) کے خطبات سے مستفید ہو کر ولایت حق کیلئے جدوجہد کرنی چاہیئے، تاکہ نظام ولایت سے انسانیت کو عدل و انصاف سے بھری دنیا نظر آئے۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) سنی اتحاد کونسل پاکستان کے چیئرمین صاحبزادہ حامد رضا نے کہا ہے کہ شہباز شریف کا نیب کو دھمکانا شرمناک ہے، شریف برادران نیب اور عدلیہ پر دباؤ ڈال کر احتساب سے بچ نہیں سکتے، مجھے کیوں نکالا کے بعد مجھے کیوں بلایا کی قوالی شروع ہو گئی ہے، حکومت مخالف مشائخ کے خلاف کسی انتقامی کاروائی کو برداشت نہیں کیا جائے گا، پنجاب حکومت مزارات اولیاء کو اوقاف کی تحویل میں دینے سے باز رہے، پنجاب کے حکمران اوچھے ہتھکنڈوں سے مشائخ کی تحریک ختم نبوت کو روک نہیں سکتے، پیر سیال شریف کی تحریک کا فیصلہ کن مرحلہ شروع ہونے والا ہے۔

انہوں نے کہا ملک میں شریعت کا نفاذ آئینی تقاضا ہے، شریعت کا نفاذ کرپٹ حکمرانوں کو وارا نہیں کھاتا، شریعت نافذ ہو گئی تو اقتدار کے ایوانوں میں بیٹھے لوگ جیلوں میں جائیں گے، اہل حق قربانیاں دے کر نظام مصطفے کو اقتدار میں لائیں گے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے سنی اتحاد کونسل کے عہدیداران و کارکنان سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ صاحبزادہ حامد رضا نے مزید کہا کہ اب استعفے مانگنے نہیں استعفے لینے کا وقت آ گیا ہے۔

چیئرمین سنی اتحاد کونسل نے کہا کہ قوم بھارتی جارحیت کا مقابلہ کرنے کے لئے متحد ہے، وزیراعظم بھارتی دھمکیوں کا دوٹوک جواب دیں، عدلیہ اور فوج کے خلاف ہر روز بولنے والا نواز شریف امریکہ اور بھارت کے خلاف زبان کیوں نہیں کھولتا، حکومت بھارت، اسرائیل اور امریکہ کے مقابلہ کے لئے چین، روس اور ایران سے تعلقات مضبوط بنائے، امریکہ بدامنی پھیلانے کے لئے داعش کو پاکستان میں لانچ کر رہا ہے۔ امریکہ پاکستان کے اندرونی معاملات میں مداخلت بند کرے۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) محکمہ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن پنجاب نے اپنے تمام ریجنل دفاتر کو مراسلہ جاری کیا ہے جس میں ریجنل ڈائریکٹرز اور موٹر رجسٹریشن اتھارٹیز کو ہدایت کی گئی ہے کہ جماعت الدعوۃ کے ذیلی فلاحی ادارے "فلاح انسانیت فاؤنڈیشن" کیلئے ایمبولینسز گاڑیوں کی رجسٹریشن نہ کریں۔

مراسلے میں ہدایت کی گئی ہے کہ فلاح انسانیت فاؤنڈیشن کی جانب سے کوئی درخواست موصول ہو جس میں مطالبہ کیا گیا ہو کہ ان کی گاڑی کو بطور ایمبولینس رجسٹرڈ کیا جائے کیا جائے تو ان کی درخواست کو مسترد کر دیا جائے۔ مراسلے میں کہا گیا کہ تا حکم ثانی ایمبولینسز کی رجسٹریشن بند رکھی جائے۔ مراسلہ سیکشن افسر محمد اکرام کے دستخط سے جاری کیا گیا ہے۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) جموں و کشمیر اتحاد المسلمین نے لائن آف کنٹرول پر جاری کشیدگی پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔ تنظیم نے آر پار عام شہریوں کی ہلاکتوں پر شدید ردعمل کا اظہار کیا ہے اور کشمیر میں جاری بھارتی بربریت کے حوالے سے 26 جنوری کو یوم سیاہ منانے کی اپیل کی ہے۔

سرینگر سے جاری اپنے ایک بیان میں جموں و کشمیر اتحاد المسلمین کے سربراہ و سینئر حریت رہنما مولانا محمد عباس انصاری نے کہا ہے کہ بھارت کو یوم جمہوریہ منانے کا کوئی جواز نہیں بنتا۔ انہوں نے کہا کہ بھارت کی جانب سے کشمیر میں جاری نسل کشی اور ظلم و بربریت بھارت کی نام نہاد جمہوریت پر بدنما داغ ہے۔ انہوں نے کہا کہ 26 جنوری کو یوم جمہوریہ منانے والے حکمرانوں کے ہاتھ کشمیری معصوم عوام کے خون سے رنگے ہوئے ہیں۔ مولانا عباس انصاری نے کہا کہ بھارت کے حکمران ایک طرف سے کشمیر میں انسانی حقوق کو پاش پاش کر رہے ہیں، دوسری طرف نام نہاد جمہوریت کا ڈھنڈورا پیٹ کر جمہوری نظام کو بدنام کر رہے ہے۔ اس لئے بھارت کا یوم جمہوریہ منانا افسوسناک عمل ہے۔

مولانا محمد عباس انصاری نے کہا کہ نریندر مودی کی حکومت اور اس کے چیلے پورے ہندوستان اور کشمیر میں مسلمانوں کے خلاف دائرہ تنگ کرنے کی کوششیں کر رہے ہیں جو انتہائی تشویشناک اور ناقابل برداشت عمل ہے۔ مولانا محمد عباس انصاری نے ملت کشمیر سے اپیل کی وہ کشمیر میں جاری نسل کشی اور بھارتی مظالم کو مدنظر رکھتے ہوئے 26 جنوری کو بھارتی یوم جمہوریہ کے موقعہ پر مکمل بائیکاٹ کرکے یوم سیاہ منائیں اور اقوام عالم کے ایوانوں تک یہ پیغام پہنچائیں کہ کشمیری قوم کھبی بھی بھارتی بربریت اور تاناشاہی کو قبول نہیں کرے گی بلکہ آزادی کا سورج طلوع ہونے تک بھارتی جبری قبضہ کے خلاف جنگ جاری رکھیں گے۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) سینٹرل جیل ہری پور میں سزائے موت پانے والے 2 مجرموں کو تختہ دار پر لٹکادیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق جان بہادر اور امان الله کو تختہ دار پر لٹکایا گیا، جان بہادر ولد گل بہادر سکنہ تخت بائی مردان نے عداوت کی بنا پر قتل کیا تھا جبکہ امان اللہ ولد محمد ہاشم سکنہ ڈی آئی خان نے گھریلو ناچاقی پر اپنی بیوی کو قتل کردیا تھا۔ پھانسی سے قبل دونوں مجرموں سے ان کے اہلخانہ کی ملاقات بھی کرائی گئی جبکہ پھانسی دینے کیلئے جلاد صادق مسیح کو خصوصی طور پر پشاور سے طلب کیا گیا تھا۔

یاد رہے کہ سال 2018ء میں حکومت کی جانب سے دی جانے والی یہ پہلی پھانسی ہے۔ واضح رہے کہ گذشتہ روز سپریم کورٹ نے فوجی عدالتوں سے سزائے موت پانے والے 3 ملزمان کی سزا پر عمل روکنے کا حکم دیا تھا۔ جسٹس عظمت سعید کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے دو رکنی بینچ نے فوجی عدالت سے سزائے موت پانے والے 3 ملزمان شفقت، صابر شاہ اور محمد لیاقت کی درخواستوں پر سماعت کی۔ فریقین کے دلائل سننے کے بعد سپریم کورٹ نے تینوں ملزمان کی سزاؤں پر عمل درآمد تاحکم ثانی روکتے ہوئے سماعت غیر معینہ مدت کیلئے ملتوی کردی تھی۔ واضح رہے کہ لیاقت پر ایک صحافی پر حملے جبکہ شفقت اور صابر شاہ پر لاہور میں ایک وکیل ارشد علی کے قتل کا الزام تھا اور تینوں کو فوجی عدالت نے سزائے موت سنائی تھی۔ یاد رہے کہ گذشتہ سال سزائے موت پانے والے 107 خطرناک دہشت گردوں نے فوجی اور انسداد دہشت گردی عدالتوں کے فیصلے چیلنج کئے تھے۔ اپیل کرنے والوں میں سانحہ صفورا، پاک فوج کے جوانوں پر حملہ کیس میں موت کی سزا پانیوالے دہشت گرد بھی شامل تھے جبکہ 8 خطرناک دہشت گردوں نے موت کی سزا کے خلاف فوجی عدالتوں کے فیصلے پر صدر مملکت کو اپیل کر رکھی ہے۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) کرد ذرائع کا کہنا ہے کہ ترک فوج کی شام کے شمالی شہر عفرین میں داخل ہونے کی کوشش ناکام رہی ہے۔

ان ذرائع کے مطابق ترک فوج نے اپنے اتحادیوں کے تعاون سے فضائی حملے کرکے شام کے صوبے حلب میں داخل ہونے کی کوشش کی مگر وہ کامیاب نہ ہوسکی اور ڈیموکریٹک فورس نے ترکی اور اس کے اتحادیوں کے حملے کو پسپا کر دیا۔روس میں شامی کردوں کے نمائندے نے بھی کہا ہے کہ عفرین میں ہونے والی جھڑپوں میں ترکی کے دس اور مسلح مخالفین سے وابستہ بیس فوجی ہلاک ہوئے جن کی لاشوں کو سرحدی شہر اعزاز منتقل کر دیا گیا۔

واضح رہے کہ ترک فوج نے شام کے صوبے حلب کے شہر عفرین پر گولہ باری اور بمباری کی ہے۔ یہ ایسی حالت میں ہے کہ شام کی حکومت نے اپنے ملک کی سرزمین پر ترک فوجیوں کی موجودگی اور ان کی فوجی کارروائی کو ہمیشہ غیر قانونی قرار دیا ہے اور ترکی کے اس قسم کے اقدام پر ہمیشہ تنقید کی ہے۔