تازہ ترین

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا ہے کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن کے حوالے سے جسٹس باقر نجفی رپورٹ کو منظر عام پر لایا جائے، 2018ء کے عام انتخابات میں مسلم لیگ (ن) کی بدترین شکست واضح طور پر دکھائی دے رہی ہے، ایم ڈبلیو ایم آئندہ عام انتخابات میں بھرپور حصہ لے گی۔

اپنے ایک بیان میں علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا کہ قانون و انصاف کی بالادستی کے بغیر ملک میں امن و امان کا حقیقی قیام ممکن نہیں، اختیارات اور طاقت کے ناجائز استعمال نے عدم تحفظ کے احساس اور بدامنی کو تقویت دی ہے، ملک کے ہر فرد کو انصاف تک رسائی ہونی چاہیے، دہشت گردی کے واقعات میں ملوث تمام مجرموں کو بلاتخصیص کیفر کردار تک پہنچایا جائے، حکمرانوں نے سانحہ ماڈل ٹاؤں کی شکل میں ریاستی دہشت گردی کی بدترین مثال رقم کی ہے، پاکستان کی تاریخ میں اس طرح کے ریاستی جبر کی اس سے قبل مثال نہیں ملتی، سانحہ ماڈل ٹاؤن میں ملوث تمام مجرمان کو قانون کے مطابق سزا ملنا عدل و انصاف کا تقاضہ ہے، انصاف کی فراہمی میں تاخیر مجرمان کے ساتھ رعایت سمجھی جاتی ہے۔

علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا کہ شہدائے ماڈل ٹاؤن کے لواحقین انصاف کے منتظر ہیں، جسٹس باقر نجفی رپورٹ کو منظر عام پر لایا جائے، تاکہ عوام حقائق سے آگاہ ہوں، سانحہ ماڈل ٹاؤن کے مجرمان کو سزا ملنا ملک میں قانون و انصاف کی حاکمیت کا نقارہ سمجھا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ مجلس وحدت مسلمین انصاف کے حصول کیلئے پاکستان عوامی تحریک کی جدوجہد کی حمایت جاری رکھے گی، 2018ء کے عام انتخابات میں مسلم لیگ (ن) کی بدترین شکست واضح طور پر دکھائی دے رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایم ڈبلیو ایم آئندہ عام انتخابات میں بھرپور حصہ لے گی، مظلومین کی حمایت اور ظالموں کی مخالفت ہمارے تنظیمی منشور کا حصہ ہے، الیکشن میں ظالموں کے ساتھ ہمارا اتحاد کسی بھی صورت ممکن نہیں۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ترجمان علامہ مختار امامی نے کہا ہے کہ پاکستان کا سترواں یوم آزادی ملی جوش و جذبے کے ساتھ منایا جائے گا، آزادی کی تقریبات کے حوالے سے ہم نے تیاریاں شروع کر رکھی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ایم ڈبلیو ایم ایک محب وطن جماعت ہے اور ملک دشمن تکفیریوں کے خلاف ہمیشہ آواز بلند کرتی آئی ہے، سندھ کی سرزمین جو ہمیشہ امن و محبت کا گہوارہ رہی ہے گذشتہ چند سالوں سے ایک سازش کے تحت یہاں دہشت گردوں کے مراکز اور سہولت کار پیدا کئے گئے ہیں۔

علامہ مختار امامی نے علامہ عارف حسین الحسینی کی 29ویں برسی اور ملکی موجودہ سیاسی صورتحال کے حوالے سے منعقدہ ایم ڈبلیو ایم کی جانب سے مہدی برحق کانفرنس کے شاندار انعقاد پر شرکاء کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ملت تشیع نے ہزاروں کی تعداد میں شرکت کرکے یہ ثابت کیا ہے کہ ہم وہ زندہ و بیدار قوم ہیں جو اپنے محسنوں کو فراموش نہیں کرتی۔

انہوں نے اسلام آباد کی انتظامیہ کو بہترین سیکورٹی فراہم کرنے اور میڈیا احباب کا بہترین کوریج پر بھی شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ وطن عزیز کے استحکام کے لئے اتحاد امت انتہائی ضروری ہے، شیعہ سنی علماء کی طرف سے تکفیری گروہوں کی حوصلہ شکنی نے یہ ثابت کیا ہے کہ پاکستان میں تکفیریت کی کوئی گنجائش نہیں، جو قوتیں تکفیریت کو پروان چڑھانا چاہتی ہیں انہیں شیعہ سنی وحدت اپنے مذموم مقاصد میں کبھی کامیاب نہیں ہونے دے گی۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) مجلس وحدت مسلمین پنجاب کے سیکرٹری جنرل علامہ سید مبارک علی موسوی کا صوبائی کابینہ کے اجلاس سے خطاب میں کہنا تھا کہ اسلام آباد پریڈ گراؤنڈ میں کامیاب تاریخی "مہدی برحق کانفرنس" کا انعقاد ہمارے جانباز اور نڈر کارکنان کی انتھک محنت اور خداوند متعال کے خاص لطف و کرم کا نتیجہ ہے، ہم اس تاریخی کانفرنس کی انعقاد پر قائد وحدت علامہ راجہ ناصر عباس اور جانثار کارکنان کو مبارکباد پیش کرتے ہیں، سنٹرل پنجاب سے ہزاروں مرد و خواتین نے موسم اور سفر کی صعوبتوں کو بالائے طاق رکھ کر شرکت کرکے مجلس وحدت مسلمین کے قائدین اور شہید قائد علامہ عارف حسین الحسینی سے اپنے والہانہ محبت و عقیدت کا اظہار کیا، ان شاء اللہ ہم ارض پاک سے ملک دشمن دہشتگردوں اور کرپٹ مافیا کے خاتمے تک چین سے نہیں بیٹھیں گے۔

انہوں نے کہا کہ مجلس وحدت مسلمین کا یہ منشور ہے کہ ہم ہر ظالم و جابر کیخلاف آہنی دیوار اور ہر مظلوم کے دست بازو بنیں گے، ہم اپنے شہداء ارض پاک کے پاکیزہ لہو کو رائیگاں نہیں جانے دینگے۔

انہوں نے کہا ہمارے محبوب قائد شہید علامہ عارف حسین الحسینی کی شہادت کا سبب حب الوطنی اور مسلم امہ کے درمیان وحدت کا پیغام عام کرنا تھا، پاکستان میں ملت تشیع کے قتل عام کا اصل مطلب یہ ہے کہ وہ اس ملک کے فطری دفاع اور دفاعی فرنٹ لائن کو ختم کرنا چاہتے ہیں، لیکن یہ ان کی خام خیالی ہے۔ انہوں نے کہا کہ چودہ سو سال سے ہمارا قتل عام جاری ہے لیکن ہم نے ظالموں اور جابروں کے سامنے اپنے سر جھکانے سے سر کٹانے کو ترجیح دی ہے، ہمارا یہ ایمان ہے کہ شہادت ہمارا ورثہ ہے جو ہماری ماوُں نے ہمیں دودھ میں پلایا ہے، وطن عزیز کی سلامتی و دفاع کیلئے اپنی جانوں کا نذرانہ دینا ہمارے ایمان کا حصہ ہے۔

اجلاس میں پروفیسر ڈاکٹر افتخار نقوی، علامہ ملازم نقوی، علامہ حسن ہمدانی، سید حسن کاظمی، سید حسین زیدی، رائے ناصر علی، رانا ماجد علی سمیت دیگر رہنماؤں اور کارکنان کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) جمعیت علمائے پاکستان (نیازی) کے مرکزی رہنما سید معصوم نقوی نے کہا ہے کہ علامہ عارف حسینی کی شہادت شیعہ سنی دونوں کے لیے یکساں نقصان تھا۔ وہ اتحاد امت کے داعی تھے، ان کے بعد علامہ ناصر عباس جعفری نے ان کے مشن کو پروان چڑھایا ہے جو خوش آئندہ بات ہے، ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایم ڈبلیو ایم کے زیراہتمام پریڈ گراونڈ میں مہد برحق کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے کہا کہ مجلس وحدت مسلمین نے غیرمشروط انداز میں شیعہ سنی افراد کو ایک دوسرے کے قریب کیا۔ ڈاکٹر امجد حسین چشتی نے کہا کہ آج اس اسٹیج پر شیعہ سنی علما کا اجتماع اس حقیقت کا عکاس ہے کہ شیعہ سنی میں کوئی اختلاف نہیں۔ ہمارے درمیان مضبوط برادرانہ تعلقات ہمیشہ قائم رہیں گے۔ جمیعت علمائے اسلام کے مرکزی رہنما پیر عثمان نوری نے کہا کہ شیعہ سنی قوتوں نے مل کر اس ملک کی حفاظت کرنی ہے۔

اتحاد امت مصطفے کے صدر پیر شفاعت رسول نوری نے کہا کہ اتحاد امت کے لیے علامہ راجہ ناصر عباس جعفری کا اخلاص لائق تحسین ہے، ہم اس اتحاد کے فارمولے کو تسلیم نہیں کرتے جس میں ظالم و مظلوم کو ایک صف میں کھڑا کیا جائے۔ ہمارے پاس اتحاد کا فارمولا محبت محمدﷺ و آل محمد ﷺ ہے۔ پاکستان کے سیاسی، مذہبی اور علمی حلقے یہ بات ذہن نشین کر لیں کہ پاکستان کی بنیاد دو قومی نظریہ ہے، اس سے انحراف پاکستان کی بقا کو خطرے میں ڈال سکتا ہے۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے زیراہتمام شہید قائد علامہ عارف حسین الحسینی کی 29ویں برسی کے سلسلے میں مہدی ؑ برحق کانفرنس کا انعقاد پریڈ گراؤنڈ اسلام آباد میں ہوا، جس میں ملک کے نامور علماء، مذہبی و سیاسی رہنماؤں اور ہزاروں کی تعداد میں کارکنان، خواتین اور بچوں نے شرکت کی۔

کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے گلگت بلتستان اسمبلی کے رکن ڈاکٹر رضوان نے کہا کہ ملک دشمن طاقتیں عارف حسینی کو شہید کرکے بھی ان کے مشن کو ختم نہ کرسکیں۔ آج کا یہ اجتماع شہید قائد کے مشن کی فتح کا اعلان ہے۔ انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان معدنی وسائل سے مالا مال ہے، حکومت پاکستان ان ذخائر سے فائدہ اٹھائے۔ سی پیک کے ثمرات سے بلاتخصیص سب کو فوائد ملنے چاہییے۔

جنوبی پنجاب کے سیکرٹری جنرل علامہ اقتدار نقوی نے کہا کہ جنوبی پنجاب میں علماء کی بےجا گرفتاریاں اور عزاداری پر قدغن حکومت کی ملت تشیع کے خلاف انتقامی کارروائیوں کا نتیجہ ہیں۔ پاکستان میں جابروں، فرعونوں اور سرکشوں کی کوئی جگہ نہیں۔ ہم ظالموں کے خلاف بلاخوف و خطر اپنی آواز بلند کرتے رہیں گے۔

سندھ کے صوبائی سیکرٹری جنرل علامہ مقصود علی ڈومکی نے کہا کہ طاغوتی طاقتوں کے عزائم خاک میں ملانے کے لئے قائد عارف حسین اپنے کارکنوں کی صورت میں آج بھی زندہ ہیں۔ ضیائی آمریت کے خلاف آواز حق بلند کرنے والے شہید قائد کو سلام پیش کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا فوجی عدالتوں کا قیام دہشت گردی کے خاتمے کے لئے عمل میں آیا۔ ان تمام عناصر کو فوجی عدالتوں کے ذریعے سزا ملنی چاہیے، جو معصوم اور بےگناہ جانوں کے ضیاع کا باعث بنے۔

خیبر پختونخوا کے صوبائی سیکرٹری جنرل علامہ محمد اقبال بہشتی نے کہا کہ ڈیرہ اسماعیل خان ملت تشیع کی مقتل گاہ بنا ہوا ہے۔ دہشت گردی سے بچنے والے نوجوانوں کو ریاستی ادارے غائب کر رہے ہیں۔ ہمارا مطالبہ ہے کہ مسنگ پرسنز کو عدالتوں میں پیش کیا جائے، اگر وہ قصور وار ہیں تو انہیں سزا دی جائے۔ مرکزی رہنماء علامہ اعجاز حسین بہشتی نے کہا کہ جو قوم شہداء کو یاد رکھتی ہے، اسے دنیا کی کوئی طاقت شکست نہیں دے سکتی۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی رہنما علامہ حسن ظفر نقوی نے دیگر مرکزی رہنماؤں کے ہمراہ پریڈ گراؤنڈ شکر پڑیاں کا دورہ کیا اور شہید قائد عارف حسینی کی 29ویں برسی کے سلسلے میں ہونے والی مہدی (ع) برحق کانفرنس کے انتظامات کا جائزہ لیا۔ اس موقع پر انہوں نے پریس کانفرنس سے خطاب بھی کیا اور کہا کہ قائد شہید علامہ عارف حسین الحسینی کے افکار پوری قوم کے لئے مشعل راہ ہیں۔ وہ وحدت و اخوت کے داعی تھے، انہوں نے ضیائی نظام کو وطن عزیز کی نظریاتی سرحدوں سے متصادم قرار دے کر آواز بلند کی۔ منافرت کی سیاست کے مقابلے میں بھائی چارے کو فروغ دیا۔ ملک دشمن قوتوں کے لئے سب سے زیادہ تکلیف دہ امر امت مسلمہ کی یکجہتی اور اتحاد رہا ہے، ان مذموم عناصر نے ہر اس شخصیت اور جماعت کی راہ میں ہمیشہ رکاوٹیں کھڑی کی ہیں، جو اتحاد بین المسلمین کے فروغ کی بات کرتا ہے۔ آج الحمد اللہ مجلس وحدت مسلمین شہید قائد علامہ عارف حسین الحسینی کے مشن پر گامزن ہے۔ اس جماعت نے ہمیشہ اتحاد و اخوت کا عملی مظاہرہ کیا ہے۔ یہ جماعت مظلومین کی حمایت کا علم لے کر میدان میں نکلی ہے، مظلوم کا تعلق چاہے جس مذہب مسلک یا جماعت سے ہو، ہم نے ہمیشہ اس کی حمایت کی ہے۔

علامہ حسن ظفر نقوی کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ نون سے ہمارا اختلاف اصولی اور ملک وقوم سے محبت کی بنیاد پر ہے۔ قوم کا سرمایہ لوٹنے والوں کی طرف دوستی کا ہاتھ بڑھانے والے مفاد پرست اور موقع شناس اور کاروباری ذہنیت کے لوگ ہیں، جن کا مقصد مفادات کا حصول ہے۔ ایسے لوگوں کو ملک و قوم کے نقصان سے کوئی غرض نہیں۔

ہم ہر اس شخص اور جماعت کے مخالف ہیں، جو ریاست اور قومی مفادات پر ذاتی و گروہی مفادات کو مقدم رکھے۔ ہمارا موقف دو ٹوک اور واضح ہے۔ ہمارے تعاون اور تعلق کی بنیاد حب الوطنی ہے۔ ملک لوٹنے والوں سے پوری قوم بیزار ہے۔

مہدیؑ برحق کانفرنس ان مذہبی طاقتوں کا عظیم الشان اجتماع ثابت ہوگی، جو ارض پاکستان کی سالمیت و استحکام کے لئے مصروف عمل ہیں۔ سنی اتحاد کونسل، عوامی تحریک، جمعیت علمائے اسلام نیازی سمیت دیگر جماعتوں کے مرکزی رہنماء اس کانفرنس میں شریک ہوں گے۔

رہنما مجلس وحدت مسلمین نے بتایا کہ کانفرنس کے انتظامات مکمل کر لئے گئے ہیں۔ بیس ہزار سے زائد نشستوں کا بندوبست کیا جا چکا ہے۔ اجتماع میں شرکت کی غرض سے پورے ملک سے قافلے اسلام آباد کے لئے روانہ ہوگئے ہیں۔ موثر سکیورٹی انتظامات کے لئے حکمت عملی طے کر لی گئی ہے۔ وفاقی انتظامیہ سمیت وحدت یوتھ کے سینکڑوں کارکنان مختلف داخلی و خارجی راستوں پر پروگرام کے اختتام تک موجود رہیں گے۔ کانفرنس میں ہزاروں کی تعداد میں مرد، خواتین اور بچے موجود ہوں گے۔ لہذا سی ڈی اے جلسہ گاہ میں پانی کی بروقت فراہمی کو یقینی بنائے۔

انہوں نے کہا کہ شہید قائد کی برسی کا یہ اجتماع وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کا ایک تاریخی اجتماع ثابت ہوگا۔ پریس کانفرنس میں علامہ احمد اقبال رضوی، علامہ مرزا یوسف حسین، علامہ محمد اقبال بہشتی، علامہ اعجاز بہشتی، علامہ ظہیر الحسن نقوی، اسد نقوی، علامہ مقصود علی ڈومکی، ترجمان علامہ مختار امامی، علامہ دوست علی سعیدی، علامہ اصغر عسکری اور نثار فیضی سمیت دیگر مرکزی رہنما بھی موجود تھے۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) شہید قائد علامہ عارف حسین الحسینی کی 29 ویں برسی کا مرکزی اجتماع 6 اگست بروز اتوار اسلام آباد میں منعقد ہوگا، جسکی تیاریاں آخری مراحل میں داخل ہوچکی ہیں۔

تفصیلات کے مطابق شہید قائد علامہ عارف الحسینی کی برسی کا مرکزی اجتماع بعنوان ’’مہدی برحق کانفرنس‘‘ مجلس وحدت مسلمین کی جانب سے پریڈ گرائونڈ اسلام آباد میں منعقد کیا جارہا ہے جس میں ملک بھر سے مومنین اپنے خانوادوں کے ہمراہ شرکت کریں گے جبکہ نامور علمائے کرام، ذاکرین اور نوحہ خواں و منقبت خواں حضرات شہید قائد کو خراج تحسین پیش کریں گے۔

اجتماع سے مختلف سیاسی جماعتوں کے رہنما خطاب کریں گے جبکہ مرکزی خطاب ایم ڈبلیو ایم کے سیکریٹری جنرل علامہ راجہ ناصرعباس کریں گے۔


مہدی برحق کانفرنس کی مزید تفصیلات اور شہید قائد سے متعلق دیگر چیزوں کے لیے
http://www.arifhussaini.com

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ترجمان علامہ مختار امامی نے کہا ہے کہ 6 اگست کو اسلام آباد میں شہید قائد علامہ عارف حسین الحسینی کی برسی کا اجتماع ملک دشمن قوتوں کے خلاف محب وطن طاقتوں کا عظیم الشان مظاہرہ ثابت ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ شہید قائد نے اخوت اور بھائی چارے کے فروغ کو اپنی زندگی کا مشن بنا رکھا تھا، شہید قائد نے جنرل ضیاء جیسے ڈکٹیٹر کو بھی اپنے عزم اور اصولی موقف کے راہ کی رکاوٹ نہیں بننے دیا، وہ باطل قوتوں کے سامنے جرات و استقامت کا پہاڑ بنے رہے، شہید قائد علامہ عارف حسینی کی 29 ویں برسی پر ہم نے اس عزم کا اعادہ کرنا ہے کہ ان کے مشن کو ادھورا نہیں چھوڑا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان اس وقت لاتعداد داخلی و خارجی بحرانوں کی لپیٹ میں ہے، پانامہ کیس پر عدالت عظمی کے منصفانہ فیصلے نے قوم کو اعصاب شکن کیفیت سے نجات دلائی، شہید قائد کی برسی میں کرپٹ عناصر کے خلاف مشترکہ جدوجہد کے عزم کا اعلان ہوگا۔ علامہ مختار امامی کا کہنا تھا کہ اس ملک کو لٹیروں کی جاگیر نہیں بننے دیا جائے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ دہشت گردی، کرپشن، مہنگائی، نا انصافی اور بدامنی سے نجات حاصل کرنے کے لئے پوری قوم کو ان طاقتوں کے خلاف آواز بلند کرنے کی ضرورت ہے جو بیرونی ڈکٹیشن پر چلتے ہیں، امریکہ اور آل سعود کی وطن عزیز کے معاملات میں مداخلت پاکستان کی خودمختاری کو چیلنج کرنے کے مترادف ہے، حکمرانوں کی منافقانہ پالیسیوں نے پوری قوم کو وقار کو تباہ کر رکھا ہے، پاکستان کی سالمیت و بقاء اور استحکام کے لئے ضروری ہے کہ ان بیرونی آقاؤں سے نجات حاصل کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ شہید قائد کی برسی میں قائدین کی طرف سے ایسے لائحہ عمل کا اعلان ہوگا جس کا راستہ ہماری اس منزل کی طرف جاتا ہے جس کا لئے قائد و اقبال نے جدوجہد کی تھی۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے اسلام آباد میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ شہدا کی تکریم و تعظیم کا درس اللہ تعالی اور انبیا کرام کا سکھایا ہوا ہے۔ جو قوم شہیدوں کو فراموش کر بیٹھتی ہے اسے ہمیشہ ناکامی دیکھنا پڑتی ہے۔ علامہ عارف حسینی شہید قوم کے باوفا اور جرات مند بیٹے تھے۔ انہوں نے ملک میں بسنے والے مختلف طبقوں کو ایک دوسرے کے قریب کیا۔ 1973ء کے آئین کے نفاذ کے لیے شہید کی خدمات کو ہر سطح پر سراہا گیا۔ وہ بیرونی قوتیں جو وطن عزیز کو تفرقہ اور نفرت کی آگ میں جھونکنا چاہتی تھی، انہوں نے وطن عزیز میں موجود اپنے آلہ کاروں کے ذریعے قائد عارف حسینی کو شہید کرایا۔ 6 اگست شہید قائد کی 29ویں برسی کی تقریب شایان شان انداز میں منائی جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ نون لیگ ایک موروثی جماعت ہے جو صرف اقربا پروری پر یقین رکھتی ہے۔ اس کی جمہوری روایات سے کوئی تعلق نہیں۔ پوری قوم سپریم کورٹ کے فیصلے کی مکمل طور پر حمایت کرتی ہے۔ ایک ایسا شخص جو کرپشن ثابت ہونے پر نااہل ہو گیا ہو اسے ہیرو ثابت کرنے کی احمقانہ کوشش سے باز رہا جائے۔

علامہ ناصر عباس کا کہنا تھا کہ سرکاری ٹی وی سمیت دیگر ادارے کسی بھی نااہل شخص کو پروٹوکول دے کر عدالت عظمی کے فیصلے کی توہین کے مرتکب ہو رہے ہیں۔ ہمارے وزرا ریاست کی وفاداری کی بجائے مخصوص خاندان کی غلامی کر رہے ہیں۔

علامہ ناصر عباس نے کہا کہ پاکستان میں داعش کے خطرات موجود ہیں۔ اس عالمی دہشت گرد تنظیم کی طرف سے دی جانے والی دھمکیوں کو ہلکا نہ لیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن کی رپورٹ کو بھی منظر عام پر لایا جائے۔ بےگناہ انسانی جانوں کا قتل ناقابل معافی جرم ہے۔ ذمہ داران کے خلاف فوری کارروائی ہونی چاہیے۔

انہوں نے کہا کہ کشمیر اور گلگت کی عوام نے تحریک پاکستان میں غیر معمولی قربانیاں دی ہیں۔ وہاں کی عوام پاکستان کے ساتھ الحاق چاہتی ہے۔ نواز شریف کی نااہلی سے ان کا کوئی واسطہ نہیں۔ سی پیک کی تکمیل پاکستان کے استحکام اور ترقی کا رخ اس خطے کی طرف موڑنے میں معاون ثابت ہو گی۔ یہ منصوبہ دو ممالک کے درمیان معاہدہ ہے شخصیات کا درمیان نہیں۔ نواز شریف کی سبکدوشی سی پیک پر قطعاََ اثرانداز نہیں ہو سکتی۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ڈپٹی سیکرٹری جنرل سید ناصر عباس شیرازی نے وزیراعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر خان اور وزیراعلٰی گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمٰن کی جانب سے سپریم کورٹ اور پاک افواج پر الزام تراشی کو سنگین غداری قرار دیتے ہوئے دونوں کے خلاف مقدمات کے اندراج اور فوری کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔

وحدت سیکرٹریٹ سولجر بازار میں شہید قائد علامہ عارف حسین الحسینی کی برسی کی مناسبت سے منعقدہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اپنے کرپٹ قائد نواز شریف کی محبت میں اندھے دونوں رہنماوں نے پانامہ کیس کے صدمے میں ریاست کے ستون اہم اداروں کے خلاف ہرزہ سرائی کی اور تمام حدود کو پار کر دیا ہے، وزیراعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر کی جانب سے کسی دوسرے ملک کے ساتھ الحاق کی بات کرنا قومی خیانت اور کشمیر کاز پر پاکستان کے موقف کو کمزور کرنے کی سنگین سازش ہے، جس پر اعلٰی عدلیہ کو فوری ایکشن لینا چاہیئے۔

ناصر شیرازی نے کہا کہ نواز شریف اور ان کا خاندان خدا کے انتقام کا نشانہ بنے ہیں، جب حکمران ظلم کے ذریعے اپنے اقتدار کو بچاتے ہیں تو خدا انصاف کے ذریعے ان کا اقتدار خاک میں ملا دیتا ہے، لٰہذا وزیراعظم آزاد کشمیر اور وزیراعلٰی گلگت بلتستان خدا کے قہر سے ڈریں۔

انہوں نے مزید کہا کہ کرپشن فقط آل شریف کا خاصہ نہیں بلکہ یہ خصوصیت ان کے تمام درباری وزراء میں بھی شدت کے ساتھ پائی جاتی ہے، امید ہے کہ سپریم کورٹ کی جانب سے قومی سلامتی اور وقار کو مدنظر رکھ کر جو تاریخی فیصلہ کیا گیا ہے، اس کے اثرات اور ثمرات دربار شریف کے تمام کرپٹ وزراء کے احتساب تک جاری رہیں گے۔