تازہ ترین

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق جی ایچ کیو میں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے امریکی سفیر ڈیوڈ ہیل نے ملاقات کی اور نئی امریکی پالیسی سے متعلق آگاہ کیا۔ امریکی سفیر ڈیوڈ ہیل نے کہا کہ امریکا دہشت گردی کے خلاف پاکستان کے کردار کی قدر کرتا ہے اور افغان مسئلے کے حل کے لیے پاکستان سے تعاون کا خواہاں ہے۔

ملاقات کے دوران جنرل قمر جاوید باجوہ نے امریکی سفیر پر زور دیا کہ ہم امریکا سے کسی بھی مالی یا عسکری امداد نہیں بلکہ اس کا اعتماد، مفاہمت اور اپنی قربانیوں کا اعتراف چاہتے ہیں۔ افغانستان میں امن کا قیام پاکستان کے لیے بھی اتنا ہی اہم ہے، جتنا دوسرے کسی اور ملک کیلئے اہمیت رکھتا ہے، ہم نے افغانستان میں قیام امن کیلیے بہت کچھ کیا ہے اور کسی کو خوش کرنے کے لیے نہیں بلکہ اپنے قومی مفاد و قومی پالیسی کے مطابق جب کہ آئندہ بھی اس سلسلے میں مزید اقدام کرتے رہیں گے۔

سربراہ پاک فوج کا کہنا تھا کہ افغانستان میں امن پاکستان کے لیے بھی بہت اہم ہے تاہم ہمارے کردار اور قربانیوں کو تسلیم کیے جانے کی ضرورت ہے، افغانستان کی طویل ترین جنگ کو منطقی انجام تک پہنچانے کے لیے تمام فریقین کے درمیان تعاون اور ہم آہنگی کامیابی کی ضمانت ہے۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) شیعہ علماء کونسل سندھ کے نائب صدر و پولیٹیکل سیکرٹری محمد یعقوب شہباز کا کہنا ہے کہ کراچی میں اسٹریٹ کرائم میں اچانک ہونے والا اضافہ شہریوں کیلئے وبال بن گیا ہے، روزانہ کی بنیادوں پر جرائم پیشہ افراد شہریوں کو لاکھوں روپے نقدی اور قیمتی اشیاء سے دن دیہاڑے محروم کر دیتے ہیں اور با آسانی فرار ہونے میں کامیاب ہو جاتے ہیں، قانون نافذ کرنے والے ادارے بھی اسٹریٹ کر منلز کے آگے بے بس نظر آتے ہیں۔

اپنے بیان میں یعقوب شہباز نے کہا کہ کراچی بھر میں شہری اس وقت جرائم پیشہ افراد کا آسان ہدف بنے ہوئے ہیں، جس سے شہریوں میں احساس محرومی بڑھ رہا ہے، اگر شہر بھر میں اسٹریٹ کرائم کی یہی صورتحال برقرار رہی، تو عوام کا اعتماد قانون نافذ کرنے والے اداروں سے ختم ہو جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ کراچی پاکستان کا معاشی حب ہے، اگر کراچی میں جرائم کی شرح بڑھے گی، تو سرمایہ کار تشویش میں مبتلا ہوں گے، جو ملک کیلئے کسی بھی صورت اچھا نہیں، لہٰذا ہم قانون نافذ کرنے والے اداروں سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ کراچی میں جرائم پیشہ افراد کے خلاف سخت سے سخت کارروائی کریں اور شہریوں کو اس عذاب سے نجات دلائیں۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) آئی ایس او پاکستان شعبہ تعلیم کے زیرِاہتمام 2 روزہ تعلیمی کانفرنس بعنوان قراقرم ایجوکیشن اینڈ لیڈر شپ کانفرنس گلگت میں کل سے ہوگی۔ ہفتہ کو ہونیوالی ورکشاپ میں گلگت بلتستان کے سینکڑوں طلبا شریک ہونگے۔ ورکشاپ میں اہم سیاسی، سماجی اور علمی شخصیات کی شرکت کو یقینی بنانے کیلئے رابطہ مہم کا سلسلہ جاری ہے۔ مرکزی سیکرٹری تعلیم یاور عباس نے وفد کے ہمراہ وزیراعلیٰ گلگت بلتستان حفیظ الرحمان سے ملاقات کی اور انہیں تعلیمی کانفرنس میں مدعو کیا۔

وزیراعلیٰ گلگت بلتستان نے کہا کہ تعلیم کسی بھی قوم کی تعمیر و ترقی کی ضامن ہے، گلگت بلتستان میں تعلیمی معیار کو مزید بہتر بنانے میں ایسے تعلیمی کانفرنسز مددگار ثابت ہونگی۔ ہم ہر اس اقدام کی حمایت کرینگے جو قوم کی ترقی کا باعث بنے گا۔ آئی ایس او کا نوجوانوں کی تعلیم و تربیت کیساتھ ساتھ اتحاد امت کے فروغ میں ہمیشہ سے ایک بہترین کردار رہا ہے، جو لائق تحسین ہے۔ آئی ایس او پاکستان کی تمام سرگرمیاں بشمول تعلیمی میدان میں کاوشیں دیگر تمام طلبہ تنظیموں کیلئے قابل تقلید ہیں۔

مرکزی سیکرٹری تعلیم یاور عباس کا کہنا تھا کہ گلگت بلستان میں تعلیمی مسائل کے حل کیلئے آئی ایس او پاکستان نے ہمیشہ کلیدی کردار ادا کیا، خدادا صلاحیتوں سے بھرپور اس خطہ میں بدقسمتی سے ایک ہی یونیورسٹی ہے جس کے باعث طلبہ دوسرے شہروں کا رخ کرنے پر مجبور ہیں۔ تعلیمی کانفرنس کے انعقاد سے طلبہ میں ہائر ایجوکیشن کی طرف رغبت میں اضافہ ہوگا۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ڈپٹی سیکرٹری جنرل علامہ احمد اقبال رضوی نے کہا ہے کہ ریاستی اداروں کا استحکام ملکی سالمیت اور بقاء کی ضمانت ہے، جو لوگ اداروں کے خلاف منفی پروپیگنڈہ کرکے انہیں کمزور کرنا چاہتے ہیں وہ ملکی سالمیت کے دشمن ہیں، عدلیہ کے وقار کو مجروح کرنے کی کسی سازش کو کامیاب نہ ہونے دیا جائے، پانامہ کے فیصلے پر ہرزہ سرائی کرنے والے عدالت عظمٰی کی توہین کے مرتکب ہو رہے ہیں، ان پر توہین عدالت کا مقدمہ دائر کرکے عوامی اجتماعات سے خطاب پر پابندی لگائی جائے، پاکستان قوم ریاستی اداروں پر بے جا تنقید کی کسی کو اجازت نہیں دے گی، نواز شریف کا واویلا چور مچائے شور کے مصداق ہے، وہ اپنی کرپشن سے توجہ ہٹانے کے لئے عدلیہ کے خلاف شور مچانے میں مصروف ہیں، پاکستان کے باشعور عوام پر حقائق آشکار ہوچکے ہیں، نواز شریف اور ان کے خاندان کے لئے پاکستان کی سیاست میں کوئی جگہ باقی نہیں رہی، اب انہیں احتساب کا سامنا کرنا ہوگا۔

ایک بیان میں ایم ڈبلیو ایم کے مرکزی ڈپٹی سیکرٹری جنرل نے کہا کہ وطن عزیز سے غیر قانونی طور پر باہر لے جانی والی ایک ایک پائی کا حساب چکایا جائے، نواز شریف کے مقبولیت کے دعوے پانی کی جھاگ کی طرح بیٹھ گئے ہیں، نااہل وزیراعظم کی مایوسی ان کے چہرے سے عیاں ہے، ملک کی کوئی بھی بڑی جماعت ان کے ساتھ کسی بھی قیمت پر بات کرنے کے لئے بھی تیار نہیں، عوامی اجتماعات کرکے وہ اداروں کو بلیک میل کرنے کی ناکام کوشش میں مگن ہیں۔

انہوں نے کہا کہ نواز شریف اینڈ پارٹی نے ارض پاک کو اپنی ذاتی جاگیر سمجھ کر بے رحمی سے لوٹا ہے۔ انہوں نے اصولوں کی بجائے لوٹ مار کی سیاست کی، اقتدار کو لوٹ مار کا ذریعہ سمجھنے والے ملک و قوم کے دشمن ہیں۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) شیعہ علماء کونسل پنجاب کے صدر علامہ سید سبطین حیدر سبزواری نے کہا ہے تفتان بارڈر پر عراق اور ایران سے آنیوالے زائرین کو سازش کے تحت بلاوجہ تنگ کیا جا رہا ہے، اس توہین آمیز رویے کو مزید برداشت نہیں کیا جائے گا، ہم نہیں چاہتے کہ ملک اور ریاست کیلئے مشکلات پیدا کریں، بہتر ہے متعصبانہ رویہ تبدیل کیا جائے۔

لاہور میں وفد سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے افسوس کا اظہار کیا کہ زائرین کا مسئلہ ناقابل برداشت حد تک اپنی انتہا کو پہنچ چکا ہے، بار بار متوجہ کیا گیا مگر لگتا ہے کہ متعلقہ ادارے اور حکومتیں بے ہوشی میں ہیں، جنہیں شہریوں کے مسائل نظر نہیں آ رہے، تفتان بارڈر پر پاکستان ہاؤس کو زائرین کا قید خانہ بنا دیا گیا ہے، جہاں بیٹھنے کی جگہ ہے، پینے کا ٹھنڈا پانی ہے اور نہ ہی بنیادی ضروریات زندگی کا سامان، لوگ واش رومز کا پانی پینے پر مجبور ہیں، خواتین اور بچوں کو قیدی بنا کر رکھا گیا ہے، ٹرانسپورٹ مہیا نہیں کی جاتی اور یہ رویہ جاتے اور آتے روا رکھا جاتا ہے۔

ان کا کہنا تھاکہ ملت جعفریہ کے صبر کا پیمانہ لبریز ہو چکا ہے، شاید نااہل عناصر کو تاریخ کا علم نہیں کہ بنو اُمیہ اور بنو عباس کی حکومتیں آئمہ اہلبیت علیہم السلام کے مزارات مقدسہ پر زیارات کا راستہ روکنے میں ناکام رہیں اور اب کوئی ان کا اچھے لفظوں میں نام لینے تیار نہیں، تو موجودہ حکومتیں بھی زیارت کربلا و نجف کو روکنے میں ناکام ہوں گی۔ شیعہ علما کونسل کے رہنما نے متنبہ کیا کہ ہمیں انتہائی اقدام پر مجبور نہ کیا جائے کہ حکومت کیلئے حالات سنبھالنا مشکل ہو جائیں گے، زیارات کیلئے اس راستے کو جاری رکھیں گے اور کسی صورت پیچھے نہیں ہٹیں گے، حکومت زائرین کی واپسی اور ان کی سہولیات کا اہتمام کرے، اور مستقل بنیادوں پر اس مسئلے کو حل کیا جائے، جو کہ حکومت اور ریاستی اداروں کی ذمہ داری ہے۔

علامہ سبطین سبزواری نے چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ، وزیر داخلہ احسن اقبال اور وزیر اعلیٰ بلوچستان ثنا اللہ زہری سے مطالبہ کیا کہ وہ زائرین کے مسئلے کو ترجیحی بنیادوں پر حل کریں۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) شیعہ علماء کونسل سندھ کے نائب صدر و پولیٹیکل سیکرٹری محمد یعقوب شہباز نے کہا ہے کہ حکومت کا فرض بنتا ہے کہ وہ عوام کی جان و مال کے تحفظ کو یقینی بنائے، لیکن مسلسل بلوچستان حکومت زائرین امام حسینؑ کو سیکیورٹی کے نام پر پریشان کر رہی ہے اور یہ عمل گزشتہ کئی سالوں سے جاری ہے، زائرین کی اس طرح تذلیل کسی بھی صورت ناقابل برداشت ہے۔

اپنے بیان میں یعقوب شہباز نے کہا کہ بلوچستان حکومت کا یہ اقدام تعصب پر مبنی نظر آتا ہے، جس سے زائرین میں مایوسی پائی جاتی ہے، اس وقت تین ہزار سے زائد زائرین تافتان بارڈر پر بے یار و مددگار سڑک پر بیٹھے ہیں، جن کی سیکیورٹی کیلئے صوبائی حکومت نے کوئی بھی سنجیدہ اقدام نہیں کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ماضی میں بھی دہشتگردوں کی جانب سے اسی مقام پر دہشتگردی کے کئی دلخراش سانحات رونماء ہو چکے ہیں، جس میں کئی سو افراد شہید اور زخمی بھی ہوئے، لیکن حکومت ماضی سے بھی سبق نہیں سیکھ رہی۔ ان کہا کہنا تھا کہ اگر زائرین کی جان و مال کو کسی بھی قسم کا نقصان ہوا، تو اس کی ذمہ داری وفاقی اور صوبائی حکومت پر عائد ہوگی، ہم آرمی چیف اور اعلیٰ حکام سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ کوئٹہ میں زائرین کے مسائل کے حل کیلئے مستقل بنیادوں پر سیکیورٹی کے اقدام کریں۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) وزیر داخلہ احسن اقبال سے تحریک نفاذ فقہ جعفریہ کے وفد نے ملاقات کی ہے جس میں وفد نے تفتان میں پھنسے زائرین کو نکالنے، محرم الحرام میں سیکیورٹی کو بہتر بنانے اور دہشت گردی کے خاتمے سے متعلق امور پر بات چیت کی ہے۔ وزارت داخلہ میں ہونے والی ملاقات میں وفاقی وزیر برائے مذہبی امور سردار یوسف بھی شریک ہوئے۔ تحریک نفاذ فقہ جعفریہ کے وفد میں شجاعت بخاری، سخاوت کاظمی، علامہ حسین مقدسی، بشارت امامی، علامہ قمر زیدی، بوعلی مہدی اور مالک اشتر شامل تھے۔ ملاقات میں تحریک نفاذ فقہ جعفریہ کے وفد نے وزیر داخلہ کو منصب سنبھالنے پر مبارک باد دی۔ اس موقع پر وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ مذہبی رواداری وقت کی اہم ضرورت ہے، انتہاپسندی ایک سازش ہے جس کا مقصد امت کو تقسیم کرنا ہے۔

وزیر داخلہ نے کہا کہ دہشت گردی کا کوئی مذہب نہیں ہوتا، تمام مکاتب فکر باہمی اختلافات بالائے طاق رکھتے ہوئے ملک کی ترقی اور خوشحالی کے لئے تعمیری کردار ادا کریں۔ احسن اقبال نے کہا کہ ملک کو درپیش انتہا پسندی اور دہشتگردی سے نمٹنے کے لئے حکومت عملی اقدامات اٹھا رہی ہے۔ ہم سب کو ملکر ملک دشمن سازشوں کو ناکام بنانا ہے، ہمارا نصب العین ہے کہ ملک میں ایسا ماحول بنایا جائے جہاں ہر فرد کی عزت اوراحترام کیا جائے۔ وزیر داخلہ نے وفد کو ماہ محرم الحرام میں سیکیورٹی مزید سخت بنانے کی بھی یقین دہانی کرائی۔

دوسری جانب تحریک نفاذ فقہ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ مکتب تشیع اور زائرین کو درپیش مسائل، دہشت گردی کے خاتمہ کیلئے تحریک نفاذ فقہ جعفریہ کے مرکزی وفد نے وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال سے ملاقات کی ہے۔ بیان کے مطابق، ملک بھر میں دہشت گردی، ڈیرہ اسمعیل خان میں ٹارگٹ کلنگ کا نوٹس لیا جائے، دہشتگردی کے خاتمے کیلئے ایکشن پلان کی تمام شقوں پر عمل کیا جائے، کالعدم جماعتوں کی سرگرمیوں کو روکا جائے۔ بیان میں کہا ہے کہ وفد نے کوئٹہ تفتان زائرین کے مسئلے کے حل کیلئے بااختیار کو آرڈنیشن کمیٹی تشکیل دینے اور کوئٹہ زاہدان ریل سروس کا دوبار اجراء کرنے کا مطالبہ کیا گیا۔

وفد نے پنجاب علماء بورڈ کی جانب سے علماء و ذاکرین پر ناروا پابندیوں کے خاتمہ کا بھی مطالبہ کیا۔ تحریک نفاذ فقہ جعفریہ نے کہا ہے کہ کالعدم جماعتوں کو امن کمیٹیوں میں شامل نہ ہونے دیا جائے، پرامن شہریوں کے نام شیڈول فور سے نکالے جائیں، سانحہ عاشورہ راجہ بازار کے بعد بےگناہ افراد پر سے قائم جھوٹے مقدمات کا خاتمہ کیا جائے اور اصلی مجرموں اور محرکوں کو شکنجے میں جکڑا جائے۔ اسلامی نظریاتی کونسل، رویت ہلال و دیگر اداروں کو سیاسی سودابازی کا مرکز نہ بنایا جائے، حنفی اور جعفری فقہوں کو یکساں حقوق دیئے جائیں۔ آمدہ محرم میں عزاداروں کے مسائل کے حل کیلئے وفاق سے ضلع تک کنٹرول رومزقائم کیے جائیں۔ اس کے علاوہ حضرت بری شاہ لطیف بری امام کے مزار پر عرس و پرسہ داری کا سلسلہ دوبارہ شروع کیا جائے۔ تمام مذہبی جماعتوں و اداروں کی بیرونی امداد پر پابندی، سائبر قوانین بہتر بنانے، کسی مسلمان کو غیرمسلم کہنے کو قابل تعزیر جرم قرار دینے کا بھی مطالبہ کیا گیا۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) بحرین کے عوام نے ایک بار پھر ملک کے سرکردہ عالم دین آیت اللہ عیسی قاسم کی حمایت میں مظاہرے کیے ہیں۔

شمالی بحرین کے مختلف علاقوں میں ہونے والے مظاہروں میں شریک لوگ آیت اللہ عیسی قاسم کے خلاف حکومت کے مخاصمانہ اقدامات بند اور ان کے گھر کا محاصرہ ختم کرنے کا مطالبہ کر رہے تھے۔
عینی شاہدین کے مطابق بحرین کی شاہی حکومت کے سیکورٹی اہلکاروں نے پرامن مظاہرین کو تشدد کا نشانہ بنایا جس کے نتیجے میں متعدد مظاہرین زخمی ہوگئے۔

بحرین کی شاہی حکومت کی نمائشی عدالت نے بے بنیاد الزامات کے تحت ملک کے سرکردہ عالم دین اور اکثریتی آبادی کے مذہبی رہنما آیت اللہ عیسی قاسم کو قید اور جرمانے کی سزا سنائی ہے۔
بحرین میں فروری دوہزار گیارہ سے عوامی مظاہروں اور احتجاج کا سلسلہ جاری ہے جس کے دوران شاہی حکومت کے سیکورٹی اہلکاروں کے پرتشدد اقدمات کے باعث سیکڑوں افراد شہید اور زخمی ہوچکے ہیں۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) پاکستان کا 70واں یوم آزادی آج اس عزم کی تجدید کے ساتھ منایا جارہاہے کہ کسی بھی خطرے کے خلاف مادروطن کا تحفظ کیا جائے گا اور بابائے قوم قائداعظم محمد علی جناح کے تصور کے مطابق اسے ایک حقیقی اسلامی فلاحی ریاست بنایا جائیگا۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان کے 70ویں یوم آزادی کے موقع پر دن کا آغاز نماز فجر کے بعد ملک کی ترقی، سلامتی یکجہتی، امت مسلمہ کے اتحاد اور کشمیریوں کی دیرینہ جدوجہد میں کامیابی کیلئے خصوصی دعائیں مانگی جائیں گی جبکہ وفاقی دارالحکومت میں 31 اور صوبائی دارالحکومتوں میں 21 توپوں کی سلامی سے تقریبات کا آغاز کیا جائے گا، قومی اسمبلی کے احاطے میں پرچم کشائی دن کی سب سے اہم تقریب ہوگی۔ صدر ممنون حسین، وزیراعظم شاہد خاقان عباسی اور چین کے نائب وزیراعظم وانگ یانگ تقریب میں مشترکہ طور پر قومی پرچم لہرائیں گے۔ اس موقع پر صدر قوم سے خطاب کریں گے۔

صوبائی دارالحکومتوں ، ضلعی ہیڈکوارٹرز اور دیگر اہم قومی اداروں میں بھی پرچم کشائی کی تقریبات ہوں گی۔ادھر تمام اہم سرکاری اور نجی عمارتوں ، سڑکوں اور شاہراہوں پر نہایت دلفریب چراغاں کیا گیا ہے اور انہیں قومی جھنڈوں ، قومی مشاہیر کی تصاویر ، بینرز اور جھنڈیوں کے ذریعے بہت خوبصورتی سے سجایا گیا ہے جو انتہائی دلکش منظر پیش کررہی ہیں۔مختلف تنظیموں نے اس دن کے سلسلے میں سیمینار ، کانفرنسوں ، لیکچرز، مباحثوں، تقریری مقابلوں، نمائشوں ، کوئز مقابلوں ، سٹیج ڈراموں اور مشاعروں سمیت کئی تقریبات کا اہتمام کیا ہے۔صدر، وزیراعظم ، چین کے نائب وزیراعظم ، چیئرمین سینیٹ اور قومی اسمبلی کے سپیکر کے ہمراہ آج پارلیمنٹ ہاؤس میں جمہوریت کے گمنام مشاہیر کی یادگار پر پھولوں کی چادر چڑھائیں گے۔

اطلاعات کی وزیر مملکت مریم اورنگزیب کی صدارت میں اتوار کو پارلیمنٹ ہاؤس میں ایک اجلاس ہوا جس میں اس موقع پر انتظامات کا جائزہ لیا گیا۔ یوم آزادی کی تقریبات کے سلسلے میں اتوار کی رات گیارہ بج کر 59 منٹ پر پریڈ گراؤنڈ شکرپڑیاں میں شاندار آتش بازی کا بھی مظاہرہ کیا گیا۔ ملک کے دیگر حصوں کی طرح بلوچستان میں بھی سترواں یوم آزادی جوش وجذبے سے منایاجائے گا۔ دن کی اہم تقریب صوبائی اسمبلی میں ہوگی جہاں وزیراعلی نواب ثنا اللہ زہری قومی پرچم لہرائیں گے۔گورنر ہاؤس اور بلوچستان ہائی کورٹ میں بھی ایسی ہی تقریبات ہوں گی۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) پاکستان کے 70 ویں یوم آزادی کے موقع پر پاک فوج کی جانب سے تیار کیا گیا خصوصی ملی نغمہ جاری کر دیا گیا۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کے ڈائریکٹر جنرل میجر جنرل آصف غفور نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ پر ملی نغمہ جاری کیا جس کا ٹائٹل ’’اے وطن تیرا بھلا ہو‘‘ ہے۔ اس نغمے کو پاکستان کے معروف گلوکار شفقت امانت علی نے گایا ہے۔

آئی ایس پی آر کی جانب سے جاری کردہ ملی نغمے کی ویڈیو میں پاکستان کی بری، بحری اور فضائی افواج کو خراج تحسین پیش کیا گیا ہے اور ملک و قوم کی حفاظت کے لیے مسلح افواج کی قربانیوں کو بھی اجاگر کیا گیا ہے۔