شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) برطانیہ کی لیبر پارٹی کے سربراہ نے کہا ہے کہ یمن پر کلسٹر بم برسانے کی بنا پر سعودی عرب پر ہوائی حملہ کر دیا جانا چاہئے۔

برطانیہ میں حزب اختلاف کی سب سے بڑی جماعت لیبر پارٹی کے سربراہ جرمی کوربین نے کیمیائی ہتھیاروں کے بہانے شام پر غیر قانونی حملے میں برطانیہ کے شامل ہونے پر مبنی تھریسا مئے کی حکومت کے فیصلے اور یمن کے بارے میں اس کے دوہرے معیار پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ یمن میں جس طرح سے سنگین انسانی بحران پیدا کیا گیا ہے اس کے پیش نظر دیگر ملکوں کو یہ حق پہنچتا ہے کہ وہ سعودی عرب کے فوجی اور فضائی اڈوں پر حملہ کر دیں کیونکہ سعودی عرب، یمن پر کلسٹر اور فاسفورس بموں سے حملہ کر رہا ہے-

انہوں نے دارالعوام میں تقریر کرتے ہوئے کہا کہ اقوام متحدہ کے تین اداروں نے جنوری میں اعلان کیا کہ بحران یمن، دنیا کا سب سے بدترین بحران ہے اس لئے برطانوی وزیرا‏‏عظم کو یہ وعدہ کرنا ہو گا وہ یمن پر سعودی عرب کی بمباری کی حمایت کرنا بند کر دیں گی-

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) سعودی ولیعہد محمد بن سلمان نے وہابیت کو اسلام سے خارج قرار دے دیا ہے۔ سعودی اخبار اخبارالسعودیہ کے مطابق سعودی ولیعہد محمد بن سلمان نے اپنے ملک میں وہابیت کی موجودگی کی تردید کی دوسری جانب سعودی عرب میں مسلمانوں کے دو فرقوں شیعہ و سنی کی موجودگی کا اقرار کیا۔

اٹلانٹک اخبار کو انٹرویو دیتے ہوئے سعودی ولیعہد محمد بن سلمان نے کہا کہ سعودی عرب میں کوئی وہابی نہیں ہمارے ملک میں شیعہ اور سنی مسلمان رہتے ہیں اور ہم سنی اسلام کو مانتے ہیں۔(حالانکہ انکا سنی اسلام سے کوئی تعلق نہیں)

واضح رہے کہ سعودی عرب ہی وہ ملک ہے جس نے وہابیت کی بنیاد رکھی اور مغرب کے ایجنڈے پر دنیا بھر میں اسے پھیلانے میں دولت خرچ کی جس کا اقرار خود سعودی ولیعہد نے کیا ہے۔ سعودی ولیعہد اسلام دشمن امریکہ اور اسرائیل کے بڑے حامی اور قریبی دوست کے طور پر پہچانے جاتے ہیں۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) پاکستانی فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ نے فوجی عدالتوں سے سزا پانے والے دس دہشت گردوں کی سزائے موت کی توثیق کر دی۔

سزائے موت کی توثیق میں معروف قوال اور مداح اہلبیت ؑ امجد صابری کے قاتل بھی شامل ہیں۔ آئی ایس پی آر کے مطابق جنرل قمر جاوید باجوہ نے پانچ دہشت گردوں کی عمر قید کی سزا کی بھی توثیق کر دی۔

آئی ایس پی آر کے جاری کردہ بیان کے مطابق تمام دہشت گردوں کا تعلق کالعدم تنظیموں سے تھا اور انہوں نے مجسٹریٹ کے سامنے اعتراف جرم بھی کیا تھا جس کے بعد خصوصی فوجی عدالتوں نے انہیں موت کی سزا سنائی تھی۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) سعودی عرب کے ولیعہد محمد بن سلمان نے وال اسٹریٹ جنرل کے ساتھ گفتگو میں امریکہ اور اسرائیل کی نیابت میں ایران پر آئندہ دس سے 15 سال کے دوران فوجی حملے کا اعلان کردیا ہے۔

محمد بن سلمان نے کہا کہ اگر ایران کے خلاف اقتصادی پابندیاں مؤثر ثابت نہ ہوئیں تو سعودی عرب امریکہ اور اسرائیل کی نیابت میں آئندہ 10 سے 15 سال کی مدت میں ایران کے خلاف فوجی کارروائی کرےگا۔

اس سے قبل محمد بن سلمان نے امریکی اخبار نیویارک ٹائمز سے گفتگو کرتے ہوئے کہا تھا کہ اگر ایران نے ایٹم بنایا تو سعودی عرب بھی فوری طور پر ایٹم بم بنا لےگا۔ تجزیہ نگارون کے مطابق سعودی عرب اپنی پوری طاقت اور قدرت اسرائیل کے بجائے ایران کے خلاف استعمال کرکے امریکہ اور اسرائیل کی عملی مدد کررہا ہے۔ اسلامی ماہرین کے مطابق سعودی عرب حقیقی اسلام کے فروغ کے بجائے امریکی اور یزیدی اسلام کو فروغ دے رہا ہے اور اس میں اسے امریکہ اور اسرائیل کی حمایت حاصل ہے اور سعودی عرب کے ولیعہد محمد بن سلمان نے اس کا اعتراف بھی کرلیا ہے۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) سعودی ولیعہد محمد بن سلمان نے کہا ہے کہ وہ نہیں سمجھتے کہ شام کے اقتدار سے بشار اسد کو ہٹایا جاسکتا ہے۔

محمد بن سلمان نے امریکی جریدے ٹائم سے گفتگو میں اس بات کا ذکر کرتے ہوئے کہ شام کے اقتدار میں بشار اسد باقی رہیں گے اور ان کا ہٹایا جانا ممکن نہیں، کہا کہ شام میں ایرانیوں کو کھلی چھوٹ دینا بشار اسد کے حق میں نہیں ہے۔
ایران، دمشق حکومت کی درخواست پر ہی شام میں موجود ہے اور وہ سعودی حمایت یافتہ دہشت گردوں کے مقابلے میں شامی فوج کے ساتھ تعاون کر رہا ہے۔

ایران کے تعاون کے نتیجے میں شام میں دہشت گردوں کی شکست ہی اس بات کا باعث بنی ہے کہ سعودی ولیعہد اس بات کا اعتراف کر رہے ہیں کہ بشار اسد کو اقتدار سے ہٹایا جانا ممکن نہیں ہے۔
دریں اثنا سعودی عرب کے ولیعہد محمد بن سلمان نے شام میں امریکی فوج کے موجود رہنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ اسرائیل کے تحفظ کے لئے شام میں امریکی فوج کا باقی رہنا ضروری ہے۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) مجلس وحدت مسلمین کراچی کے سیکریٹری اطلاعات سید احسن عباس رضوی نے کراچی سمیت سندھ کے مختلف حصوں میں بجلی کی طویل دورانیے کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ پر شدید ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ سندھ خصوصاً کراچی میں جاری بجلی کے مصنوعی بحران کا جلد خاتمہ نہ ہونے کی صورت میں پہلے مرحلے میں آگہی و تشہیری مہم اور دوسرے مرحلے میں احتجاجی مہم کا آغاز کریں گے، انہوں نے وفاقی وزیر بجلی و پانی اور چیف جسٹس آف پاکستان سے کراچی میں غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کا نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔ اپنے مذمتی بیان میں احسن رضوی نے کہا کہ سندھ حکومت عوام کو سہولیات کی فراہمی کی بجائے آئے دن ان کی مشکلات میں اضافے کا باعث بن رہی ہے، کراچی میں گرمی کے آغاز کے ساتھ ہی بارہ بارہ گھنٹے بجلی کی بندش حکومت کی ’’مثالی کارکردگی‘‘ پر سوالیہ نشان ہے۔ انہوں نے کہا کہ کراچی سمیت صوبے بھر میں میٹرک کے امتحانات کا آغاز ہو چکا ہے اور کے الیکٹرک کی ’’مہربانیاں‘‘ طلباء و طالبات کی تیاری کے دوران ان کیلئے درد سر بنی ہوئی ہیں۔

احسن عباس رضوی نے کہا کہ ناعاقبت اندیش حکمرانوں اور کے الیکٹرک انتظامیہ نے گذشتہ سالوں میں ہیٹ اسٹروک اور لوڈشیڈنگ کے باعث قیمتی انسانی جانوں کے ضیاع سے سبق نہیں سیکھا، عوام کو صاف پانی، بجلی، گیس، صحت و صفائی اور تعلیم جیسی بنیادی سہولیات کی فراہمی حکومت کی آئنی ذمہ داری ہے، لیکن ہر دور میں بے حس حکمرانوں نے اپنی ذمہ داریوں کی ادائیگی کے بجائے انہیں اخباری دعوؤں تک ہی محدود رکھا۔ انہوں نے کہا کہ عوامی جماعت ہونے کی دعویدار پیپلز پارٹی کی سندھ حکومت کی طرف سے عوام کیلئے کھڑی کی جانے والی مشکلات آئندہ عام انتخابات میں جماعت کی مقبولیت کیلئے سخت نقصان دہ ثابت ہوں گی۔ رہنما ایم ڈبلیو ایم نے مطالبہ کیا کہ سندھ حکومت لوڈشیڈنگ پر قابو پانے کیلئے ترجیحی بنیادوں پر اقدامات کرے۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) شام کے صوبہ ادلب میں سعودی عرب کے حمایت یافتہ وہابی دہشت گردوں کے درمیان آپس میں خونریز لڑائی جاری ہے۔

اطلاعات کے مطابق شام کے صوبہ ادلب میں سعودی عرب کے حمایت یافتہ وہابی دہشت گردوں کے درمیان آپس میں خونریز لڑائی جاری ہے۔ وہابی دہشت گرد گروہ تحریر الشام اور آزادی محاذ کے درمیان شدید لڑائی جاری ہے جس کے نتیجے میں دونوں طرف سے متعدد دہشت گرد ہلاک ہوگئے ہیں۔ ذرائع کے مطابق تحریر الشام نے حلب کے مغرب میں واقع المحبہ اور السعدیہ علاقوں سےمحاذ آزادی گروہ کے دہشت گردوں کو باہر نکال دیا ہے۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) شام کے علاقے غوطہ شرقی میں شامی فوج کی تیز رفتار پیش قدمی جاری ہے اور اس نے مزید کئی علاقوں کو دہشت گردوں کے قبضے سے آزاد کرا لیا ہے۔

ذرائع کے مطابق شامی فوج نے چند گھنٹوں کے اندر غوطہ شرقی میں الصالحہ کے مغرب میں بیت نایم نامی علاقے کو دہشت گردوں کے قبضے سے آزاد کرا لیا ہے۔اس سے قبل شامی فوج نے الشیفونیہ اور شہر دوما کی گذرگاہ کو دہشت گردوں کے قبضے سے آزاد کرا لیا تھا۔یہ ایسی حالت میں ہے کہ تیس سے زائد ان عام شہریوں کو بھی رہا کرا لیا گیا جن کو دہشت گردوں نے نایم کے علاقے سے اغوا کر لیا تھا۔العب کی زرعی اراضی بھی شامی فوج کی دستر س میں آگئی ہیں ۔ العب ہی وہ علاقہ ہے کہ جہاں دہشت گرد گروہوں کے ہیڈکوارٹر ہیں اور ہتھیاروں کے گودام اور بڑی جیل بھی اسی علاقے میں واقع ہے۔ایک ذریعے کا کہنا ہے کہ غوطہ شرقی میں دہشت گردوں کے زیرقبضہ چالیس فیصد علاقوں کو شامی فوج نے آزاد کرا لیا ہے جبکہ اس کی تیز رفتار پیش قدمی کا سلسلہ بھی بدستور جاری ہے۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) پاکستان میں انسانی حقوق کے لیے فعال شیعہ افراد کا لاپتہ ہونا ایک معمول بن گیا ہے جس پر ملک بھر سمیت بیرون ملک مقیم پاکستانی برادری میں بھی تشویش پائی جاتی ہے۔

امریکہ میں مقیم پاکستانی کمیونٹی نے انجینیئر ممتاز رضوی سمیت 75 لاپتہ شیعہ افراد سے متعلق اپنی تشویش کا اظہار کرتے ہوئے امریکہ میں تعینات پاکستانی سفارتکار کو ایک خط لکھا ہے جس میں لاپتہ شیعہ افراد کی بابت جواب طلب کیا گیا ہے۔

خط میں لکھا گیا ہے کہ انجینیئر ممتاز رضوی سمیت 75 شیعہ افراد کا لاپتہ ہونا سیکیورٹی اداروں کی جانب سے انسانی حقوق کی کھلی خلاف ورزی ہے، لوگوں کو لاپتہ کرنے کی یہ حالیہ لہر باعث تشویش اور شرمناک ہے۔

خط میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ انجینیئر ممتاز رضوی (جو پانچ بچوں کے والد ہیں اور کاروبار کے سلسلے میں کوئٹہ سے کراچی واپسی پر خضدار کے مقام سے لاپتہ کردیے گئے) سمیت دیگر 75 سے زائد لاپتہ شیعہ افراد کو بازیاب کرایا جائے۔

واضح رہے کہ گزشتہ کئی مہینوں سے ملک بھر سے شیعہ افراد کی پر اسرار گمشدگی کا سلسلہ جاری ہے جس کے خلاف لاپتہ شیعہ افراد کے اہل خانہ مختلف مقامات پر احتجاج کرتے رہتے ہیں اور حکومت سمیت تمام مقتدر شخصیات سے اپنے پیاروں کی بازیابی کا مطالبہ کرتے ہیں۔

شیعہ نیوز (پاکستانی شیعہ خبر رساں ادارہ) مجلس وحدت مسلمین پاکستان گلگت بلتستان کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل شیخ احمد علی نوری نے اپنے ایک تعزیتی بیان میں کہا ہے کہ عالم مبارز و مجاہد حجت السلام آغا علی رضوی کو انکی والدہ محترمہ اور میر واعظ نیورنگاہ آغا محمد علی شاہ کو انکی اہلیہ محترمہ کی وفات پر تعزیت و تسلیت پیش کرتے ہیں۔

انہوں نے اپنے بیان میں کہا کہ آغا علی رضوی کی والدہ محترمہ کی رحلت پر انکو اور تمام لواحقین کو تعزیت و تسلیت و پیش کرتے ہیں۔ والدہ محترمہ کی وفات سے آغا علی رضوی کی زندگی میں جو خلا پیدا ہوگیا ہے اسے پر کرنا ممکن نہیں۔ انہیں صبر و شکر کی تلقین کے ساتھ والدہ محترمہ کی مغفرت اور درجات کی بلندی کے لیے دعا گو ہیں۔ انہوں نے کہا کہ موت ایک اٹل حقیقت ہے اور ہر کسی نے اس کا مزہ چکھنا ہے۔ خدا اپنے بندوں کو مختلف امتحانات کے ذریعے سے آزماتا ہے اور وہی بندے کامیاب ہوتے ہیں جن کے ہاتھ سے صبر و شکر کا دامن نہیں چھوٹتا۔ ماں جیسی عظیم ہستی کی موت انتہائی سخت امتحان ہے، کیونکہ اس ہستی کی کمی کو کوئی بھی پورا نہیں کرسکتا۔ اللہ سے دعا ہے کہ اپنے نہ ختم ہونے والے خزانہ غیب سے لواحقین بلخصوص آغا علی رضوی کو اس نعمت کا نعم البدل عطا فرما اور مرحومہ کے درجات میں اضافہ فرما۔